Press Release

MANZOOR-UL-HAQ MALIK – ACTING PRESIDENT OF FPCCI

(Karachi P.R. 18th Sep, 2017) Mr. Manzoor-ul-Haq Malik, Vice President & Incharge, Punjab Region of FPCCI, has taken over as Acting President, FPCCI, during the visit abroad of Mr. Zubair F. Tufail, President, FPCCI who is attending the South Asia Business Day - 2017 in Taiwan.

Mr. Manzoor Malik represents the Sheikhupura Chamber of Commerce a... Read More


The Federation of Pakistan Chambers of Commerce and Industry (FPCCI) is organizing its 5th Achievement Award ceremony on October 4th, 2017 at Karachi.

(Karachi 16th Sep, 2017) The Federation of Pakistan Chambers of Commerce and Industry (FPCCI) is organizing its 5th Achievement Award ceremony on October 4th, 2017 at Karachi. In order to recognize and honor the dedicated individuals and enterprises of Pakistani origin who have made significant, sustained and lasting contribution in socio-economic... Read More


FPCCI Denies Plagiarization of Research Report on CPEC

(Karachi P.R. 15th Sep, 2017) In the present era of modernization the freedom of expression is considered a right of every individuals and comments whatsoever made by any individual are considered his personal views in personal capacity. This was commented by Mr. Shifaat Zaidi Chairman of the FPCCI Standing Committee on Research and Development w... Read More

منظورالحق ملک فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے قائم مقام صدر مقرر

منظورالحق ملک فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے قائم مقام صدر مقرر کراچی( 18-09-2017) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹری کے صدرزبیر طفیل جنوبی ایشیا ء بز نس ڈے2017 میں شر کت کے لیے آج سے تا ئیوان غیر ملکی دورہ پر روانہ ہوگئے۔ زبیر طفیل کی غیر موجودگی میں نائب صدرمنظورالحق ملک قائم مقام صدر ایف پی سی سی آئی کی حیثیت سے فرائض انجام دیں گے۔

ڈاکٹر اقبال تھیم
سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی مزید تفصیل...


ایف پی سی سی آئی نے سی پیک رپو رٹ کی چو ری سے متعلق خبر و ں تر دید کر دی ۔

کرا چی (15-09-2017) ایف پی سی سی آئی اسٹنڈ نگ کمیٹی کے چیئر مین شفا عت زیدی نے کہاہے کہ عالمگیر یت کے مو جو دہ زما نے میں ہر فر د کو آزادی اور حق ہے وہ اپنا ذاتی مو قف اور بیان  مزید تفصیل...


محتر مہ سیما شکیل ، چیف کمشنر ان لینڈ ریو نیو لا رج ٹیکس پیئر یو نٹ(LTU) نے ایف پی سی سی آئی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آ

کرا چی ( 15-09-2017) محتر مہ سیما شکیل ، چیف کمشنر ان لینڈ ریو نیو لا رج ٹیکس پیئر یو نٹ(LTU) نے ایف پی سی سی آئی کا دورہ کیا۔ اس موقع پر فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈانڈسٹر ی کے قا ئم مقام صدر عرفان احمد سر وانہ نے خطبہ استقبا لیہ میں کہا کہ پاکستان کی گرتی ہو ئی برآمدات میں مسلسل کمی کی ایک بڑ ی وجہ سیلز ٹیکس ریفنڈکی ادا ئیگی میں تا خیر بھی ہے جسکی وجہ سے ایکسپو رٹرز ورکنگ کیپٹل کی کمی شکا ر ہو جا تے ہیں ایکسپو رٹ آرڈر کی بر وقت تکمیل کیلئے انہیں ما رکیٹ سے زیا دہ شر ح ما رک اپ پر قر ضہ لینا پڑتا ہے اور انکی لا گت پیداوار بڑ ھ جا تی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر چہ وزیر خزا نہ نے اپنی بجٹ تقر یر میں 15جولا ئی تک تمام سیلز ٹیکس ریفنڈ ز جنکے آر پی اوRPO اپر یل 2017 تک منظو ر ہو چکے ہیں کی ادا ئیگی کا وعدہ کیاتھا مگر ہما رے پا س ابھی تک ایسے Cases آرہے ہیں جن کے ریفنڈزRPO کی منظو ری کے با وجو د بھی ابھی تک ادا نہیں کیئے گئے ایکسپورٹرز کا کہنا ہے کہ ٹیکس کلکٹر ز کو ٹیکس کی وصولیوں کا جوTarget دیا جا تا ہے اس کو مصنوعی طر یقے پر پورا کرنے کیلئے ریفنڈز کی ادائیگی روکدی جاتی ہے ۔سیلز ٹیکس آڈٹ کے بارے میں قا ئم مقام صدر عرفان احمد سر وانہ نے کہاکہ سیلز ٹیکس ریٹر ن میں NIL FILERS مثلاً ایکسپورٹر ز ، سو ل ڈسٹر ی بیو ٹر وغیر ہ جب قا نو ن کے مطابق ریفنڈز کلیمز داخل کر تے ہیں تو ان کو بھی بطو ر سزا آڈٹ کا نو ٹس بھیج دیا جا تا ہے تا کہ ریفنڈز کلیمز کی حو صلہ شکنی ہو اور آڈٹ کے ڈر سے وہ ریفنڈزکلیمز نہ کر یں۔ اس قسم کے آڈٹ سے ٹیکس دھند ہ اور ٹیکس کلکٹر کے درمیان رابطہ بڑ ھتا ہے جو کہ حکومت کی ٹیکس پا لیسی کے خلا ف ہے کیو نکہ اس سے کر پشن اور ٹیکس چو ری کی حو صلہ افزائی ہو تی ہے ۔ نیز یہ کہ آڈٹ جب ایک دفعہ شروع کیاجا تا ہے تو ختم یا مکمل ہو نے کا نا م نہیں لیتا اور تعطل کا شکا ر رہتا ہے چنانچہ انہوں نے تجو یز دی کہ مقر رہ مد ت میں آڈٹ مکمل کیا جا ئے ۔ سیلز ٹیکس رجسٹر یشن اور ڈی رجسٹر یشن کے با رے میں انہوں نے کہاکہ بے شما ر در خواستیں تعطل کا شکا ر ہیں ۔ اپنی اس نا کامی کا ایف بی آر نے اعتراف بھی کیا ہے اسکی وجہ پیچید ہ اور مشکل طر یقہ کا ر ہے اس سلسلے میں انہوں نے تجو یز دی کہ رجسٹر یشن کی در خواست پر 7 دن کے اند ر اندر عا رضی رجسٹر یشن نمبر دید یا جا ئے تا کہ وہ اپنی کا روبا ری سر گر میاں شروع کر سکے اور تصدیق کا عمل 60دن میں مکمل کیا جائے یہی طر یقہ کا رڈی رجسٹر یشن کیلئے اپنا یا جا ئے۔Exemption سر ٹیفیکٹ کے بارے میں عرفان احمد سروانہ نے کہاکہ انکم ٹیکس آرڈیننس2001 کے تحت خام ما ل یا مشنری کی امپورٹ کیلئے آن لا ئنExemption سر ٹیفیکٹحا صل کر نے کا طر یقہ کا ر بہت طو یل اور Time Consuming ہے اس کے علاوہ کسی غلطی کی صورت میں اسکی درستگی یا تر میم بھی نہیں ہو سکتی ۔انہوں نے کہاکہ ٹیکس دھند ہ کو سسٹم میں 25دن کے اند ر اندر غلطی کی در ستگی یا تر میم کی اجازت دی جا ئے ۔ اس موقع پر سابق چیف ایگز یکٹو TDAP اور سابق صدر ایف پی سی سی آئی ایس ایم منیر نے کہاکہ صنعتکا رو ں اور تا جرو ں کو حکومت کی جانب سے سہولت ملنی چاہیے تا جرو ں کا سب سے اہم مسئلہ ٹیکس ریفنڈ ز کی بر وقت ادائیگی کا ہے جس کے لیے جامع اقداما ت کی ضرورت ہے تا کہ ایکسپورٹرز کی مشکلا ت کم ہو سکیں کیو نکہ بجلی ، گیس اور زائد ٹیکس ریٹ کی وجہ سے صنعتیں زوال کا شکا ر ہیں مہنگا ئی اور بیروزگاری بڑ ھ رہی ہے جسکی وجہ سے ملک میں شدید بدامنی اور افراتفر ی بڑ ھنے کا خطر ہ ہے ۔اس موقع پر محتر مہ سیما شکیل ، چیف کمشنر ان لینڈ ریو نیو لا رج ٹیکس پیئر یو نٹLTU نے کہاکہ تا جر برا دری اپنے ٹیکس سے متعلق شکا یت کے لیے برا ئے راست ہم سے رابطہ کریں اور کو رٹ کچہر ی میں جا نے سے گریز کر یں کیو ں کہ ہم تا جرو بردار ی کو سہو لیا ت فراہم کر نا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے شکیل احمد ڈھینگرا سے اتفاق کر تے ہو ئے کہاکہ Alternete Dispute Resolution Committeesکام کر رہی ہیں جو کہ متنا زعہ مسائل کو رٹ سے باہر بغیر کسی معا وضہ کے بہت کم وقت میں حل کر ہی ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ LTU کے 52ارب روپے کے ریو نیو کو رٹ کیسز میں پھنسے ہو ئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ریفنڈ ز کے نظا م میں پہلے کے مقابلے میں بہتری آئی ہے اور ایف بی آر نے مو جو دہ ما لی سال کے پہلے دو ماہ میں زیا دہ تر کیسز میں ادائیگی کر دی ہے ۔ انہوں نے عا رضی سیلز ٹیکس رجسٹر یشن کی تجو یز کو سراہا اور کہاکہ وہ اس سلسلے میں ایف بی آر کو اپنی سفارشات پیش کر یں گی ۔

شمع سعید
قا ئم مقا م سیکریٹر ی جنر ل ایف پی سی سی آئی مزید تفصیل...

Chambers & Associations


Exporting To The Globe

Afghanistan Bangladesh China Iran India

United Kingdom United States Of America UAE SRI LANKA Indonesia Mauritius