Press Release

ایف پی سی سی آئی کے صدر جنا ب عبدالرؤف عالم نے اسلامک چیمبر آف کامر س اینڈانڈسٹری کی ایگزیکٹو کمیٹی اور جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شر کت کرنے

ایف پی سی سی آئی ہیڈ آفس کرا چی(۴ مارچ ۲۰۱۶) ایف پی سی سی آئی کے صدر جنا ب عبدالرؤف عالم نے اسلامک چیمبر آف کامر س اینڈانڈسٹری کی ایگزیکٹو کمیٹی اور جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شر کت کرنے کیلئے رواں ماہ میں جلد روانہ ہونگے۔صدر نے کہاکہ فیڈریشن کی طر ف سے شرکت کا مقصد اسلامی ممالک کے درمیان تجا ر ت میں رکاوٹوں کو دور کر تے ہوئے فر و غ دینا ہے ۔ عبدالرؤف عالم نے بتایا کہ ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں سر کا ری اور نجی شعبو ں میں پیدا واری اور مسا بقت ،ویلیو ایڈ یشن مصنوعات ،فری ایکسپورٹ پر و سنگ زونز،سرمایہ کاری کے ذرائع کے مختلف پہلو پہ روشنی ڈالی جائے گی کیونکہ انٹرا اُو آئی سی ( OIC)کی عالمی تجا ر ت میں صرف 25فیصد نمائند گی ہے۔

صدر ایف پی سی سی آئی نے بتایا کہ اسلا می ممالک کی کل تجا رت عالمی منڈی میں صرف 19فیصد نمائند گی رکھتی ہے۔ انہوں نے تفصیل بتاتے ہوئے کہاکہ 2005میں صرف 15فیصد حصہ عالمی تجا ر ت کا اسلامی ممالک کے پاس تھاجو کہ اب 4فیصد بڑھ گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ عالمی تجا ر ت میں یو ر پی یونین کا64فیصد،NAFTAکا49فیصد،ASEANکا25فیصدحصہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ حقیقت میں اسلامی ممالک کا بلاک دنیا میں سب سے بڑا ہے مگر ان کے درمیان باہمی تجارت بہت کم ہے ۔

اسلامی ممالک کے درمیان تجا ر تی تعلقات پر بحث کرتے ہوئے صدر نے کہاکہ ICDTکی رپورٹ کے مطابق انٹرا اُو آئی سی
( OIC)کی بر آمداد میں سب سے بڑی رکاوٹوں میں نئی مارکیٹ کی ڈیولپمنٹ پہ لاگت،غیر ملکی کرنسی کے خطرات ،لیبر کی سپلائی پہ لگنے والی لاگت،غیر ملکی حکومتوں کے قوانین،لائنس،بانڈاور مقا می شراکت دار کی موجو د گی شامل ہے۔

صدر ایف پی سی سی آئی نے بتایاکہ مسلم ممالک کا تجارتی حصہ یورپی یونین کے ساتھ 20فیصد ہے جبکہ چین کے ساتھ 13فیصد ہے۔انہوں نے کہاکہ مسلم مما لک کی برآمداد میں معدنیات اور ایندھن شامل ہے جبکہ اہم بر آمدادمیں مشینری ،جو ائیلر اور الیکٹریکل اپریٹس شامل ہے۔ انہوں نے بتایاکہ (OIC)کے57ممالک میں سے صرف UAE،ترکی سعودی عرب ،انڈنیشیا اورملائیشیا50فیصد بر آمدادمیں حصہ دار ہیں۔ جبکہ 90فیصد حصہ غیر تیل اور غیر گیس کی تجا ر ت مسلم ممالکD-8ممالک کے ساتھ کر رہاہے۔صدر ایف پی سی سی آئی جو کہ ECOچیمبر آف کامر س اینڈانڈسٹری D-8چیمبر آف کامر س کے صدر کے عہدے پہ بھی فائز ہیں انہوں نے کہاکہ پاکستان ،ترکی ،ملائیشیا،انڈونیشیا،UAEاور مصر اس وقت سب سے زیا دہ تجارتی رکاوٹوں کا سامنا کر رہے ہیں جن میں نان ٹیرف اقدامات شامل ہیں جوکہ بتا ئے گئے ممالک کے پارٹنر ممالک نے عائد کئے ہو ئے ہیں۔انہوں زور دیتے ہوئے کہاکہICCI،ECO،D-8،OICکی سب سے اولین تر جیح ان رکاوٹوں کو دور کرنا ہے جس سے ممبران ممالک کے درمیان اقتصادی اور تجارتی سرگر میوں میں اضا فہ ہوگا۔

مہر عالم خان
قائم مقام سیکریٹری جنرل( ایف پی سی سی آئی )