Press Release

نیپال کے سفیر نے ایف پی سی سی آئی کا دورہ کیا۔

نیپال کے سفیر نے ایف پی سی سی آئی کا دورہ کیا۔کرا چی ( 07-02-2016) پاکستان اور نیپا ل کے لو گو ں کے در میان رابطہ بڑ ھا نے اور بز نس مین کی سہو لیا ت کے لیے تھا ئی ائیر ویز کو کرا چی اور لا ہو ر کے لیے اپنی پرواز یں کھٹمنڈو کے ذریعے شروع کرنی چا ہیے یہ بات فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے نائب صدر مرزا اشتیاق بیگ نے نیپالی سفارتکار محتر مہ سیو المسل ادیکری سے ملا قات کے دوران فیڈریشن ہا ؤ س میں کہی ۔ مرز ا اشتیاق بیگ اور نیپالی سفارتکا ر نے تجا رت کو بڑھانے اور اقصادی تعلقا ت کو مضبو ط کر نے کے لیے مختلف تجا ویز کا تبادلہ خیال کیا۔ اور اس با ت پر متفق ہو ئے کہ دو نو ں ممالک کی تجا رتی کمیونٹی کے در میان تعلقا ت بڑ ھانے کے لیے جو ائنٹ بز نس کو نسل 1196میں قائم کی گئی تھی اس کے علاوہ سفارتی سطح پر تعلقا ت مضبو ط کیئے جائیں اور تجا رتی وفو د کا تبادلہ اور ایک دو سرے کی نما ئشو ں میں شر کت کو یقینی بنا یا جا ئے اس کے علاوہ اشتیا ق بیگ نے زور دیاکہ دو نو ں ممالک کے در میان ایف ٹی اے یعنی فر ی ٹر یڈ ایگر یمنٹکی جلد از جلد تکمیل کی جائے کیو نکہ جغر افیا ئی قر بت کے پیش نظر دو نو ں ممالک کے در ماین تجا رتی لا گت بہت زیا دہ ہے ۔ اجلاس میں حمید آختر چڈھا اور سلمان طفیل نے بھی شر کت کی۔مرز ا اشتیاق بیگ نے مزید کہا کہ پاکستانی اشیاء خا ص طو ر پر چمڑا سے بنی ہو ئی اشیا ء ، کا رپٹ ، ادویات ، ٹیکسٹائل ، پشمینہ لا ن ، ٹیکسٹائل کی اشیاء کی نیپال میں بڑ ی ما نگ ہے اور ان اشیاء کو منا سب طر یقے سے ما رکیٹنگ کر نا چا یئے ۔ انہو ں نے مزید کہاکہ پاکستان اور نیپا ل کے در میان قر یبی اور خو شگو ار تعلقا ت ہیں لیکن یہ تعلقا ت تجا رت کے تعلقا ت میں نظر نہیں آتے ۔ ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر نے مزید بتا یا کہ بہت سے پاکستانی سر مایہ کا ر نیپا ل کے سر مایہ کا رو ں کے ساتھ سر مایہ کا ری کے مشتر کہ منصو بو ں میں دلچسپی رکھتے ہیں ۔ نیپالی سفیر محترمہ Sewa Lamsal Adhikariنے تجا رت اور سر مایہ کا ری کے فر وغ کے لیے تجا رتی وفود کا دو نو ں ممالک کے در ماین تبادلے پر زور دیا اور اس سلسلے میں اپنی مکمل حمایت کا یقین دلا یا ۔ نیپالی سفارتکار نے مزید کہاکہ ایگر ی کلچر اور ٹو رزم میں وہ دو سیکٹر ہیں جہا ں دو نو ں ممالک تعاون کر سکتے ہیں نیپالی سفارتکا ر نے مزید کہاکہ لو جسٹک کے مسائل ، روابطہ کی کمی اور نہ منا سب ما رکیٹنگ تجا رت میں کمی وجو ہا ت ہیں اور تجا رت نہ بڑ ھنے کی را ہ مین رکا وٹیں ہیں ۔ landlocked ملک ہے جہا ں نقل وحمل transport freightکے وسائل مشکل ہیں اس کے علاوہ پاکستان اور نیپا ل سارک کے اہم ممبر ہیں اس لیے دو نو ں ممالک کے در میا ن تجا رت بڑھنے کے بہت چانس ہیں دو نو ں سارک بلاک کے ممبر ہو نے کے نا طے اچھے تعلقات رکھتے ہیں ۔ نیپالی سفارکار کے ہمراہ کمرشل Attache اور نیپال کے اعزازی کو نسل جنر ل بھی مو جو د تھے۔

مہر عالم خان
قائم مقام سیکر یٹری جنرل ایف پی سی سی آئی