Press Release

ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نا ئب صدر شیخ خالد تواب نے دہشتگر دی کے خلاف جنگ سے ہو نے والے نقصانا ت پر افسو س کا ظہار کیا ۔

کرا چی ( 18-11-2016) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے سنیئر نائب صدر شیخ خالد تواب نے کہاکہ دہشتگر دی کے خلاف جنگ کی وجہ سے پاکستان میں اقتصادی ترقی نہیں ہو سکتی جو کہ سیا سی استحکام ،سماجی واقتصای خو شحالی پاکستان کی تر قی کی راہ میں بڑ ی رکا وٹ ہے ۔ انہوں نے ایک بیا ن میں کہاکہ دہشتگردی کے خلاف جنگ سے نہ صر ف انسانی جا نو ں کا نقصان ہو ا ہے جو کہ نا قابل تلا فی ہے اس کے علاوہ اس میں سر مایہ کاری کے ما حو ل کو ختم کر دیا ہے اور پاکستان کی اقتصادی سر گر میوں میں کمی کر دی ہے اور پاکستان میں بے روز گاری اور غر بت کو بڑ ھا دیا ہے ۔ شیخ خالد تواب نے اسٹیٹ بینک کی سالا نہ رپورٹ میں دیئے گئے اعداد وشما ر کا حوالہ دیتے ہو ئے کہاکہ 2013سے لے کر اب تک تقر یباً 118.3 ارب ڈالر کا پاکستان کو نقصان ہو چکا ہے ۔ جس سے پاکستان کے اندرونی و بیر نی قر ضہ جا ت میں اضا فہ ہو اہے ۔ انہوں نے مزید کہاکہ ان نقصانات میں برآمدات میں کمی، غیر ملکی سر مایہ کا ری میں کمی ،صنعتی پیداوار اور ٹیکس کی وصولیوں میں کمی، انفرا سٹر کلچر کا تبا ہ ہو نا اور متا ثر ین کو معا وضہ دینا اور ملک میں غیر یقینی صو رت حال شامل ہے ۔ انہوں نے کہاکہ قو می وسا ئل ما دی اور انسانی کا ایک بڑا حصہ سکیورٹی چیلنجز سے نمٹنے کے لیے استعمال ہو نے لگا ہے ۔ انہوں نے سر مایہ کا ری سے متعلق کہاکہ پاکستا ن میں سر مایہ کا ری کی جی ڈی پی کے تنا سب سے کا فی کم ہو چکی ہے اور اب صر ف 15.2فیصد ہے ۔ جو کہ 2008میں 22.7فیصد تھی ۔ اس کے علاوہ غیر ملکی سر مایہ جو کہ 2008میں 15.4ارب ڈالر تھی اب صر ف 1.2ارب ڈالر ہے ۔ انہوں نے غیر ملکی سر مایہ کا رو ں کے ساتھ ساتھ پاکستانی سر مایہ کا ری بھی انتظا ر کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں اور برآمد کنند گا ن بھی رسدی زنیجیراور دیگر رکاوٹو ں کی وجہ سے اپنے آرڈر پو رے نہیں کر پا رہے ہیں ۔ مندرجہ با لا کے علاوہ پاکستان میں سیا حت کی صنعت کو بھی بہت نقصان ہو ا ہے ۔ جو کہ پہلے 5سو سے 6سو ڈالر کی آمدنی حکومت کے خزا نے میں ڈالتا تھا ۔ اب اس کو نقصا ن کا سامنا ہے اور بین الا قو امی سطح پر دو سرے ممالک کی عوام پاکستان آنے سے گر یز کر تے ہیں ۔ دہشتگر دی کے خلا ف جنگ میں پاکستان کے سا ف امیج کو بُر ی طر ح سے متا ثر کیا ہے ۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کے وہ دہشتگردی کے خلاف جنگ سے ہو نے والے نقصانا ت کی تلا فی کے لیے لو گو ں کو تعلیم اور روزگار سے ہمکنا ر کر ے اور اس کے علاوہ صنعتکا روں پر تو جہ دیں اور اس کے ساتھ ساتھ اور دو سرے اقداما ت کر ے جس سے دہشتگر دی کے خلاف جنگ میں کم سے کم نقصا ن ہو ۔

مہر عالم خا ن
قائم مقام سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی