Press Release

اسلامی ممالک کے در میان تجا رتی حجم کی کمی پر تشو یش کا اظہا ر ۔ شیخ خالد تواب ، سنیئر نا ئب صدر ایف پی سی سی آئی

کرا چی ( 08-09-2016) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹری کے سنیئر نا ئب صدر شیخ خالد توان نے کہاکہ اسلامی ممالک کے در میان جغر افیا ئی تعلقات کے با وجو د OICممالک کے در میان مجمو عی تجا رتی حجم میں صر ف 19فیصد ہے جو کہاسلامی ممالک کے درمیان تجا رت کی کم سطح پر ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اسلامی ممالک میں بہت سے قدرتی وسائل ذرائع مو جو د ہیں جو کہ قدرت کا تحفہ ہے ۔ انہوں نے تمام مسلم ممالک پر زور دیتے ہو ئے کہاکہ آپس میں تجا رتی تعلقا ت کو مزید مضبو ط، بہتراور مستحکم کر یں اور ایک دو سرے کے ساتھ سر ما یہ کا ری کے موقع سے فا ئدہ اٹھا ئیں۔ انہوں نے کہاکہOIC بلاک دنیا کا سب سے بڑا بلا ک ہے جو کہ اسلامی ممالک ممبرا ن جو کہ ایک چو تھائی رقبے پر مشتمل ہیں۔ اور اس کی آبا دی دنیا کی آبادی کی 22فیصد ہے ۔ جبکہ OIC ممالک کا عالمی GDPمیں 8فیصد حصہ ہے ، جبکہ 2فیصد پو ری دنیا کا حصہ ہے ۔ اسلامی ممالک کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے بشمو ل غیر یقینی ، سیا سی اور معاشی حالات کی وجہ سے ۔ انہوں نے کہاکہ حلال مصنوعات کے حوالے سے مسلم ممالک ایک بہت بڑی ما رکیٹ ہے ۔ جس میں سر مایہ کا ری کے بہت سے موقع مو جو د ہیں ۔ ہمیں چا ہیے کہ حلا ل مصنوعات کو ویلیو اڈیشن کر یں کیونکہ حفا ظت ، حفظا ن صحت اور اخلاقی معیا ر کی بہترین پیکنگ کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے مز ید کہاکہ غیر ضروری روکاوٹوں مثلاً ویزا، بینکنگ سسٹم اور مختلف پیچید ہ مسائل اسلامی ممالک کی معیشت پر اثر انداز ہو رہی ہے ۔ جس سے پرائیوٹ سیکٹر اسلامی ممالک کے ساتھ کھل کر اپنا کردار ادا نہیں کر پا رہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کو اسلامی ممالک کے ساتھ تجا رتی تعلقات بڑھانے چا ہیے جو کہ ایک تجا رت کے لیے بہت بڑ ی ما رکیٹ ثابت ہو سکتی ہے ۔ جس میں چا ول ، آم ، دو دھ کی مصنو عات، تا زہ سبزیاں ، پھل، کھیلوں کا سامان ، سر جر ی کل آئٹم دواسازی کی مصنوعات ، چمڑا، کر پٹ اور ٹیکسٹائل و غیرہ شامل ہے ۔ OIC کا مو جو دہ حجم پاکستان میں صرف 32فیصد ہے پاکستان کو چا ہیے کہ پاکستان اسلامی ممالک کی مختلف نما ئشو ں میں شر کت کریں اور تجا رتی وفود کا تبا دلہ کرے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے کمر شل آفیسر کو مز ید فعل بنا یا جا ئے تا کہ ایکسپورٹ کے مزید مو قع میسر ہو سکیں ۔