Press Release

فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے قائم مقام صدر شیخ خالد تواب نے کہا کہ

فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے قائم مقام صدر شیخ خالد تواب نے کہا کہکرا چی ( 17-08-2016) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کے قائم مقام صدر شیخ خالد تواب نے کہا کہ یہ میر ے لیے بڑ ی خو شی کی با ت ہے کہ ایف پی سی سی آئی کی سند ھ ریجنل اسنڈنگ کمیٹی برا ئے پریس اینڈ الیکٹر نک میڈ یا نے\" ڈیجیٹل میڈ یا سیکو رٹی اور سا ئبر کرا ئم کے اہم مو ضو ع پر آج جو سمینار منعقد کیا اس سے میں خطا ب کر رہا ہو ں ۔میں اس موقع پر ڈاکٹرمصدق ملک ،معاون خصو صی برا ئے وزیر اعظم، ایس ایم منیر چیف ایگز یکٹو ٹی ڈیپ کا بھی شکر یہ ادا کرتا ہو ں کے جنہوں نے ہما ری دعوت منظو ر کر تے ہو ئے اس تقر یب میں بطو ر چیف گیسٹ شر کت کی ۔ شا ہد ند یم بلو چ ۔ سا بق انسپکٹر جنرل پولیس کا بھی مشکو ر ہوں کے وہ ہما ری دعوت پر اپنی مصروفیات میں سے وقت نکال کر فیڈریشن تشر یف لا ئے ۔ اس موقع پر میں کہ ایف پی سی سی آئی کے نائب صدور حنیف گوہر ، ذولفقار علی شیخ اس کے علا وہ ایف پی سی سی آئی قائمہ کمیٹی برا ئے سند ھ ریجنل اسٹینڈ نگ کمیٹی برا ئے پریس اینڈ الیکٹر نک میڈ یا کی چیئر پر سن صاحبزادی ما حین خان ، شا ہد ند یم بلو چ ۔ سا بق انسپکٹر جنرل پولیس، زبیر طفیل، اکرا م راجپوت، وسیم وہرا ، شکیل احمد دھینگرا ، ممتا ز علی شیخ ، گلزار فیروز اور بڑ ی تعدا د میں بز نس کمیونٹی نے شر کت کی۔ انہوں نے کہا کہ فیڈریشن نے اس سیمنار کو منعقد کر ایا جس کا مقصد بز نس کمیونٹی ، صنعتکار اور عام شہری میں\" ڈیجیٹل میڈ یا سیکو رٹی اور سا ئبر کرا ئم سے متعلق آگا ہی پیدا کر نا ہے ۔ آج کا یہ سیمنار اس موضوع پر اپنی نوعیت کا پہلا سیمنار ہے میں امید کرتا ہو ں کہ مصدق ملک کی سر برا ہی میں آئند ہ بھی مختلف موضوعات پر لو گو ں میں اہم مسائل پرآگا ہی پیدا کر نے کے لیے سیمنار منعقد کرائے جا ئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سا ئنس اور ٹیکنا لو جی کی تر قی نے تر قی یا فتہ اور تر قی پز یرممالک میں مواصالا ت کے نیٹ ورک کی سہو لت کو وسعت دی ہے اور تیز تر موا صالا تی نظا م کو فر وغ دیا ہے جس کے تحت ہر قسم کی معلو ما ت کا تیز ی سے تبا دلہ ہو رہا ہے۔ خالد تواب نے بتا یا کہ اس وقت تقر یباً 3.6 بلین انٹر نیٹ صارفین ہیں جو کہ دنیا کی کل آبا دی کا 49فیصد ہے ۔ اس کے علا وہ دنیا میں 5بلین سے زیا دہ موبائل فو ن کنکشن ہیں ۔ ہر روز تقر یباً290بلین ای میل اور 5بلین فو ن میسجز کا تبادلہ دنیا بھر میں ہو رہا ہے ۔ اور ان مو صولاتی چینل پر دنیا کے لو گو ں کا انحصار بڑ ھتا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کاہ کہا کہ ڈیجیٹل نیٹ ورک کی مقبولیت اور سہو لیات کی وجہ سے کا روباری سر گر میاں بالخصوص اور سماجی سر گر میاں بالعمو م کمپیو ٹر اور internet-based networking پر انحصا ر کر رہی ہیں جس کی وجہ سے ان سر گر میوں سے متعلق جرائم مثلاً سائبر کرا ئم اور ڈیجیٹل نیٹ ورک سے متعلق جرا ئم میں بھی اضا فہ ہو رہا ہے ۔ یہ جرا ئم کمپیوٹر نیٹ ورک پر حملے یا مداخلت کے ذریعے کیے جا تے ہے اور ان میں مالی فرڈ، کمپیوٹر بینکنگ،انٹر نیٹ سے فحش تصاویر ڈاون لو ڈ کر نا ، وائر س حملے، ای میل کو ہیک کر نا،جعلی ویب سائیٹ ، نسلی منافرت پھیلاناوغیرہ جیسے جرا ئم شامل ہیں۔ فیڈریشن کے قائم مقام صدر خالد تواب نے کہا کہ سائبر کرا ئم کے پہلے جر م کا انکشاف 2000میں ہو ا جس میں دنیا بھر میں بڑ ے پیمانے پر کمپیوٹر وائرس کے حملے کے ذریعے تقر یباً45ملین کمپیوٹر متا ثر ہو ئے ۔ پچھلے چند سالو ں میں بین الاقوامی سائبر کرا ئم کے لینڈ اسکیپ میں ڈرامائی تبادیلی آئی ہے ۔ جس کے تحت جرا ئم پیشہ آفراد نے جدید اورا علیٰ ٹیکنالو جی کے ذریعے سائبر سیکورٹی کو تو ڑ کر سائبر کرا ئم کیئے ہیں ۔ سائبر کرا ئم سے نہ صر ف معا شر تی نقصا ن ہو تا ہے بلکہ یہ ملکی معیشت کو بھی ما لی نقصان پہنچاتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایک اندازے کے مطابق عالمی سطح پر سالانہ 4بلین ڈالر سے زیا دہ نقصانا ت اس کرا ئم سے ہو تے ہیں ۔ مختلف ممالک نے اس کرا ئم کی روک تھام کے لیے مختلف قا نون پاس کیے ہے ۔ پاکستان نے بھی سائبر کرا ئم کی تعداد میں اضا فہ ہو تا جا رہا ہے جس کی وجہ ہما ری حکومت نے حال ہی میں سائبر کرا ئم کی روک تھا م کے لیے ایک بل منظو ر کیا ہے جس کے تحت کسی بھی شحض کے ڈیٹا تک بغیر اجا زت کے رسائی اور اس کے ڈیٹا کو نقصان پہنچا نا اور کسی بھی جر م کے لیے استعمال کرنا، الیکٹرونک جعل سازی ، جرائم میں استعمال ہو نے والی آلات بنا نا ، سم کا رڈ کا بغیر اجا زت کے اجرا ء کرنا ، غلط معلومات پھلا نا اور اس قسم کے مختلف جرا ئم پر حکومت نے مختلف سزا وں کا اطلاق کر دیا ہے ۔ جس سے امید ہے کہ آنے والے دنو ں میں ان جرائم میں کمی واقع ہو گی ۔