Press Release

تیز ی کے ساتھ ان شر ح سودمیں اضا فہ سے پاکستانی معیشت کے مختلف سیکٹرز متا ثر ہو نگے۔غضنفر بلو ر

کرا چی ( 28مئی 2018) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈانڈ سٹر ی کے صدر غضنفر بلو ر نے حا لیہ زری پا لیسی پر تبصر ہ کر تے ہو ئے کہاکہ پا لیسی ریٹ کو6.5فیصد کر دینا اس وقت منا سب نہیں ہے جب مختلف ممالک کے Competitors پاکستان آرہے ہیں جبکہ ان کے ممالک میں کم شر ح سو د ہے ۔ انہوں نے کہاہے کہ اس متنا زعہ پالیسی سے مقامی سر مایہ کا رو ں کی حوصلہ شکنی ہو گی خاص طور پر میگا پر وجیکٹ انفرا اسٹر کچر سے متعلق بالخصو ص سی پیک سے متعلق منصو بے۔ انہوں نے کہاکہ انڈ سٹر ی اور سروس سیکٹر کی شر ح نمو میں اضا فہ کو برقرار رکھنا وقت کی ضرورت ہے جو کا فی عر صے کے بعد بڑھنا شروع ہو ئی ہے۔حالیہ پالیسی ریٹ میں اضا فہ 6فیصدسے سا ڑھے چھ فیصد سے اُبھر تی ہو ئی معیشت پر بو جھ آئے گا ۔ غضنفر بلو ر نے زور دیتے ہو ئے کہاکہ حکومتکا روباری ما حول میں بہتری لا رہی ہے اور مر کز ی بینک کو بھی چا ہیے کپہ وہ اس کا روباری ما حول کو بہتر کر نے میں اپنا کردار ادا کر ے اور اپنے پا لیسی تر تیب دے جس سے مقامی کا روباری افراد کو کا روبار کے مواقع ملیں اور وہ معا شی سر گر میوں میں بڑ ھ چڑھ کر حصہ لیں گی ۔ ہا ئی پا لیسی ریٹ بمعہ depreciation اور کیپٹل گڈز سیکٹر پر منفی اثر ڈالے گا ۔ غضنفر بلو ر نے کہاکہاس وقت جب نگرا ن حکومت آنے والی ہے اور شر ح سود میں اضا فہ Adverseاثرات مر تب کر ے گا اور اس با ت کا خدشہ ہے کہ افرط زر کے علاوہ نگرا ن حکومت کو ما لیا تی سپورٹ کے لیے جو آدھا فیصد پالیسی ریٹ میں اضا فہ کے بعد فنڈ کا اکٹھا کر نا بھی شامل ہے ۔ چا ہیے تو یہ کہ پالیسی ریٹ میں اس وقت استحکام ضروری ہے تا کہ سیا سی اور مالیاتی ٹھہراؤ بر قرار رھنا چاہیے ۔


مہر عالم خان
قا ئم مقام سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی