Press Release

پاکستان اور سری لنکا کے درمیان با ہمی تجا رت کو مثبت اندا ز میں فرو غ دینے کیلئے فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کا مر س اینڈ انڈسٹری نے سر ی لنک

پاکستان اور سری لنکا کے درمیان با ہمی تجا رت کو مثبت اندا ز میں فرو غ دینے کیلئے فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کا مر س اینڈ انڈسٹری نے سر ی لنکایف پی سی سی آئی ہیڈ آفس کرا چی(۷ اپریل ۲۰۱۶) پاکستان اور سری لنکا کے درمیان با ہمی تجا رت کو مثبت اندا ز میں فرو غ دینے کیلئے فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کا مر س اینڈ انڈسٹری نے سر ی لنکا کے وزیز صنعت راساد بدیو تھین کی قیا د ت میں دس رکنی وفد کو فیڈریشن ہاؤس میں دعوت دی۔اور اس ملاقا ت کے دوران پاکستان سر ی لنکاجو ائنٹ کے تحت ایک یا دا شت MOU)) پر دستخط کئے گئے یہ یا داشت پاکستان سر ی لنکا بزنس کو نسل آف دی سیلون چیمبر آف کامرس آف سری لنکااور پاکستا ن سری لنکا بزنس کا نسل آف فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کا مر س اینڈ انڈسٹری کے درمیان طے پا یا۔ اس تقریب میں ٹی ڈیپ کے چیف ایگزیکٹو ایس ایم منیر بطور مہما ن خصوصی موجو د تھے۔ اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے صدر جنا ب عبدالرؤ ف عالم نے کہا کہ پاکستان جنو بی ایشیا میں سر ی لنکا کا دوسرا سب سے بڑا تجا ر تی پار ٹنر ہے۔اور سری لنکا ہی وہ واحد ملک ہے جس کے ساتھ پاکستان میں سب سے پہلا فر ی ٹریڈ ایگریمنٹ طے پایا تھا۔تقریبا 4ہزار سے زائد مصنو عات سر ی لنکا سے پاکستان میں درآمد کی جا تی ہیں۔اور دو نو ں مما لک کے درمیان تقریبا 4سو ملین امریکی ڈالرسے زائد کی تجا ر ت ہو رہی ہے۔اس موقع پر عمران خلیل نصیر چےئرمین پاکستان سری لنکا بزنس کونسل نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ سری لنکا کے ساتھ تجا ر ت میں پاکستان کو کم سے کم رکاوٹوں کا سامنا ہے۔اور جیسا کہ دونوں ممالک سارک کے ممبر بھی ہیں جس کی وجہ سے دو نوں ممالک تجا ر ت کے معاملات میں زیا دہ سے زیا دہ سہولت سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

اس تقریب میں ایف پی سی سی آئی کے سینئر نائب صدر خالد تواب نے سر ی لنکا کے وفد کا خیر مقدم کیااور امید ظاہر کی کہ دونو ں ممالک کے درمیان لئے گئے فیصلوں کوجلد عملی جا مہ پہنایا جائے گا ۔اور مزید کہا کہ بین الاقوامی تجارت میں فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری ایک نہایت ہی اہم کردارد ادا کر رہا ہے جیسا کہ ایف پی سی سی آئی کی مختلف ممالک کے ساتھ بزنس کونسل کی کار کر د گی ہما رے سامنے ہے۔ وزیر تجارت نے سری لنکا کے وفد کا خیر مقدم کر تے ہوئے کہا کہ دونو ں ممالک کے درمیان کئی شعبوں میں تجا رت کو مز ید فر و غ دینا چا ہیے۔جن میں ٹیکسٹا ئل ،کھلوں کی مصنوعات ،کھانے کی اشیاؤغیرہ شامل ہیں ۔ سر ی لنکا کے وزیز صنعت راساد بدیو تھین نے ایف پی سی سی آئی کی مہما ن نوازی کا شکریہ ادا کر تے ہوئے کہا کہ ان کو وفد صرف پاکستان میں لفاظی بحث ومباحث کر نے کے بجائے پاکستان کی تا جر بر ا د ری کے ساتھ مستحکم تجا ر تی روابط کو فر و غ دینے کیلئے دونو ں ممالک کی چیمبرآف کامر س کے درمیان (MOU)کی طرف علمی طو ر پر دیہان دینے پر زور دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس (MOU)سے قبل دونو ں ممالک کے درمیان باہمی تجارت کا فی اچھی رہی ہے۔ اور اب اس بات کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ اس (MOU)کے بعددونو ں ممالک کئی شعبوں میں دو طر فہ تجا ر ت کو فر و غ دینگے جن میں اس سے قبل کبھی کسی قسم کی تجارت نہیں ہوئی۔

ٹی ڈیپ کے چیف ایگزیکٹو ایس ایم منیر نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ پاکستان اور سر ی لنکا نہ صرف جنو بی ایشیا ء کے خطے کے اہم ممال ہیں بلکہ دو نو ں ممالک ایک دو سرے کی طرف مثبت ہم آہنگی رکھتے ہیں۔جس کے تحت تجا ر تی بر ا د ری اس بات کی گو ا ہ ہے کہ دو نو ں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں کے وفد کا درطر فہ تعلق موجو د ہے۔انہوں نے ایف پی سی سی آئی کے اس اقدام کا خیر مقدم کیا ۔جس کے تحت دونو ں ممالک کی چیمبر آف کامر س کے درمیان(MOU) پر دستخط کئے گئے ہیں ۔انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس (MOU) میں موجود تمام گزارشات کو عملی جا مہ پہنایا جائے۔جو حکومتی سطح پر دونو ں ممالک کے درمیان تجارت کو فر وغ دینے میں مزید سہولیات فر اہم کر سکتے ہیں۔تقریب میں ایف پی سی سی آئی کے نائب صدورحنیف گوہر،ارشد فاروق،ذولفقار علی شیخ،اور فیصل جمال دشتی موجود تھے اور ان کے ہمراہ ایف پی سی سی آئی کے سینےئر ممبران بھی شامل تھے ۔تقریب میں روہیتا تھیلاکراتنے ، صدر سری لنکا پاکستان بزنس کونسل بھی موجود تھے۔