Press Release

Pakistan and Russia may devise out a land route for future trade

May 22, 2018 (Moscow, Russia) Pakistan and Russia may devise out a land route for future trade which will be cheaper source of transportation and help selling our products at competitive prices. This was stated by Syed Mazhar Ali Nasir Senior Vice President of FPCCI while addressing the Institute of Oriental Studies Moscow, Russia. The FPCCI deleg... Read More


FPCCI RESEARCH ON TEXTILE SECTOR Report Prepared by R&D Department of FPCCI

21st May, 2018 Karachi, The Research & Development Department of FPCCI prepared a detailed document on the issues of Pakistan’s Exports. The study was conducted with the consultation of Export Advisory Committee of FPCCI which was formed in compliance of Prime Minister Directives to submit proposals for enhancing export from Pakistan.

The rep... Read More


FPCCI appreciates consistent efforts of Dr. Miftah Ismail for boosting exports

17th May, 2018, Syed Mazhar Ali Nasir, Senior Vice President and Chairman, Budget Advisory Council of the Federation of Pakistan Chambers of Commerce & Industry (FPCCI) has hailed the Finance Minister Dr. Miftah Ismail for allocating Rs. 24 billion in the budget for announcing the second round of export incentive package, before the end of his ten... Read More

ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نائب صدر سید مظہرعلی نا صر روس میں Institute of Oriental Studies ما سکو سے خطا ب کیا

ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نائب صدر سید مظہرعلی نا صر روس میں Institute of Oriental Studies ما سکو سے خطا ب کیا ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نائب صدر سید مظہرعلی نا صر روس میں Institute of Oriental Studies ما سکو سے خطا ب کیا۔
کرا چی ( 22مئی 2018) پاکستان اور روس کو مستقبل قریب میں تجا رت کیلئے ایسا زمینی روٹکا ستعمال کر نا چا ہیے جو ٹر انسپورٹکو کم کر ے اور پاکستان مین اشیا ء کی فرو خت کو بڑھائے یہ با ت سید مظہر علی نا صر نے انسٹی ٹیوٹ آف اورنٹیل اسٹڈیز میں خطا ب کے دوران کہی۔ ایف پی سی سی آئی کا ایک اعلیٰ سطح کا وفد رو س کے دورہ پر ہے جہاں وہ رشین چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے عہدیدارن سے ملا قا ت کے گا اور شنگھا ئی کو آپر یشن آرگنا زنگ (SCO) بز نس فو رم میں بھی سینٹ پیٹر بر گ بز نس فورم کے مقام پر شر کت کرے گا ۔ انہو ں نے کہاکہ WTOکے وجو د میں آنے کے بعد عالمی معا شی نظا م میں تبدیلیں واقع ہو ئیں اور تجا رتی مقا صد سیا ست سے ھٹ کر معا شی ضرورتو ں اور اقوام کے در میان رہ گیا ہے جو کبھی سیا سی نظام اور ممالک کے درمیان تعلقا ت اب معا شی بنیا دوں پر ہو ئے ہے۔ ۔ انہوں نے پاکستان اور روس کے ما بین 70سالہ تعلقا ت پر خطا ب کرتے ہو ئے کہاکہ پاکستان اور روس کے سفا رتی تعلقا ت ہو ا کر تے تھے اس پر اظہار کر تے ہو ئے کہاکہ پاکستان اور روس کے معا شی تعلقا ت1950کے اوئل میں قا ئم ہو ئے تھے حب سو ویت یو نین (روس) نے کا ٹن ، پٹ سن ، چمڑاکی مصنو عات امپورٹ کر نے پر رضا مند ی ظاہر کی تھی ۔ دو نو ں ممالک نے 1958 میں آئل consortium قا ئم کی تھی اور بعدمیں1961میں پاکستان کی پہلی اسٹیل مل قا ئم ہو ئی۔ انہوں نے مزید کہاکہ حکومت پاکستان اور رشین فیڈریشن کو اپنے با ہمی روابط میں بڑھانے چا ہیے اب وقت آگیا ہے کہ پرائیوٹ سیکٹر ان تمام کا وششو ں کا استعمال کر ے ۔ ایف پی سی سی آئی اور فیڈریشن آف رشین چیمبر ز آف کامرس کو چا ہیے اور اپنی با ہمی تجا رت کے حجم کو 541 بلین ڈالر سے بڑھا ئیں ۔ انہوں نے کہاکہ دو نو ں ممالک کو چا ہیے کہ وہ با ہمی تجا رت کے راستے میں آنیو الی حا ئل رکا وٹو ں کو ختم کر یں اور تجا رت میں اضافے پر زور دیں روس میں پاکستان کے سفیر قا ضی خلیل اللہ نے بھی اس ایو نٹ میں شر کت کی۔

کیپشن فو ٹو گراف :- ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نائب صدر سید مظہر علی نا صر روس میںInstitute of Oriental Studies ما سکو سے خطا ب کررہے ہیں ۔ اس موقع پرروس میں پاکستان کے سفیر قا ضی خلیل اللہ بھی مو جو د ہیں ۔

مہر عالم خان
قا ئم مقام سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی مزید تفصیل...


تر دید

کرا چی ( 22مئی 2018) فیڈریشن آف پاکستان چیمبر زآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے تر جمان نے اس خبر کی شد ید الفا ظ میں مذ مت کی ہے جو کہ حلال پروڈکٹ اینڈ سروس ایسوسی ایشن (HPSAP) کے لا ئ مزید تفصیل...


پاکستا نی ایکسپو رٹ میں اضا فہ کیلئے ایف پی سی سی آئی نے سفا رشات حکومت پاکستا ن کو بھیج دی ہیں

کرا چی ( 21مئی 2018) فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ ڈپارٹمنٹ نے پاکستان کی بر آمدت کے مسائل کے حوالے سے تفصیلی دستا ویزات تیا ر کیے ہیں ۔ یہ تجا ویز ایکسپورٹ ایڈوائزری کمیٹی ایف پی سی سی آئی کی مشورات سے تیا ر کیے ہیں۔ وزیر اعظم پاکستان کی ہد ایت پر تیار کی گئی ہیں تا کہ بر آمدات میں اضافہ ہو سکے جس میں ایکسپورٹ کی بہتری کیلئے طر یقہ کار کی روشنی میں تیار کیے ہیں ۔ اس رپورٹ میں مختلف برآمدات کے سیکٹر ز کے متعلق تجاویز ہیں اور بلخصو ص ٹیکسٹا ئل سیکٹر جو پاکستانی ایکسپورٹ کا سب سے بڑا سیکٹر بھی ہے ۔ ٹیکسٹا ئل سیکٹر کی رپو رٹ اس با ت کو ظاہر کیاگیا ہے کہ میں پاکستان ہمسایہ ممالک کے مقا بلے میں ٹیکسٹا ئل ایکسپورٹ کے اہداف حاصل کر نے پیچھے رہ گیا ہے جیسا کہ بنگلادیش ٹیکسٹا ئل ایکسپورٹ کا ہدف 60ارب ہے، بھارت نے ایکسپورٹ میں 30ارب کا ہدف رکھا ہے، جبکہ پاکستانی کل برآمدت 25بلین سے کم ہو کر 20 بلین تک رہ گئی ہیں ۔ ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ کی اس رپورٹ میں یہ ظاہر کر رہی ہے ۔ رپورٹ نے مختلف مسا ئل در یا فت کیئے جو ٹیکسٹا ئل کی برآمدات کو متا ثر کیے ہو ئے ہیں جیسا کا روبا ری لا گت خصو صاً 11فیصد ٹیکسز اور سر چار جز جو کہ ٹیکسٹا ئل سیکٹر کے مینو فیکچرز پر کیئے ہو ئے ہیں ۔ اسی طر ح Cooton Balesکی کم پیداوار اور حکومتی سطح پر جو ٹیکسٹا ئل پیکیج اعلا ن ہو ا تھا اس پر عمل پر عمل در آمدنہ ہو نا ہے اور ہماری یو ٹیلیٹی بلز اور خام ما ل کی زائد قیمتیں بھی ٹیکسٹا ئل کی بر آمدات میں کمی کی وجہ ہے ۔ رپورٹ کے مطا بق چین عالمی سطح پر 36فیصد ٹیکسٹا ئل کی برآمدات میں حصہ رکھتا ہے جبکہ ویت نا م 12.4فیصد اور پاکستان 7فیصد حصہ رکھتا ہے اگر Products Specific ایگر یمنٹ ان تین ممالک کے درمیان کر لیا جا ئے تو یہ تینو ں ممالک دنیا کی ٹیکسٹائل ما رکیٹ کا 50فیصد حصہ Capture کر سکتے ہیں ۔

مہر عالم خان
قا ئم مقام سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی مزید تفصیل...

Videos

Visit of FPCCI Delegation to U.K. Reported by Geo News

Chambers & Associations


Exporting To The Globe

Afghanistan Bangladesh China Iran India

United Kingdom United States Of America UAE SRI LANKA Indonesia Mauritius